قافلہ حق کا امین

ق

قاضی صاحب کی وفات سے لیکر آج تک کوئی جمعہ ایسا نہیں گزرا کہ قاضی صاحب کی کمی محسوس نہ کی ہو۔کالج دور میں ہر جمعے کو میرا معمول تھا کہ کالج سے چھٹی کے فوری بعد میں نہادھو کر نئے کپڑے بدل کر فوری منصورہ پہنچ جاتا اور جامع مسجد منصورہ کے مرکزی دروازے پر قاضی صاحب کا انتظار کرتا۔

جامع مسجد منصورہ میں جمعہ کا خطاب اور خطبہ قاضی صاحب دیا کرتے تھے۔ایک بجے کے قریب جب قاضی صاحب منصورہ مسجد کے باہر جلوہ افروز ہوتے تو ان کے نورانی چہرے کی روشن کرنیں ہر طرف بکھر جاتی اور ہلکی مسکراہٹ سے ہر طرف بہار آجاتی۔کیا جوان کیا بچے کیا بوڑھے سب قاضی صاحب کی جانب لپکتے اور قاضی صاحب ہر ایک سے مصافحہ کرنےکے بعد مسجد میں داخل ہوتے۔
میں نے اپنا یہ معمول بنایا تھا کہ مرکزی دروازے پر جونہی قاضی صاحب جوتے اتارتے میں فوری لپک کر ان کے جوتے اٹھا لیتا اور ممبر کے پیچھے بنی مخصوص جگہ پر رکھ لیتا اور نماز ختم ہونے کے بعد قاضی صاحب جب اٹھنے لگتے تو پھر ان کے جوتے ہاتھ میں لئے ان کے پیچھے پیچھے چلا آتا اور قاضی صاحب کے قدموں پر رکھ لیتا۔قاضی صاحب نے ایک دو دفعہ منع بھی کیا لیکن میں بھی کہاں پیچھے ہٹنے والا تھا۔پھر قاضی صاحب نے میرے خلوص اور محبت کو بھانپ لیا تھا اور انھوں نے پھر کبھی منع نہیں کیا۔نماز سے واپسی پر اپنی گاڑی پہ بیٹھ کر دایاں بازو اٹھا کر سب کو مسکراہٹ کے ساتھ الوداع کرتے۔قاضی صاحب سے یہ میری عقیدت تھی جسے میں آج تک ہر جمعے کو محسوس کرتا ہوں۔
آج قاضی صاحب کی ساتویں برسی ہے قاضی صاحب کی جماعت اسلامی اور پاکستان کیلئے خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی بالخصوص قدر مشترک اور درد مشترک پر قوم کو اکھٹا کرنا ان کا سب سے بڑا کارنامہ تھا ان کی قربانیوں کی بدولت عالم اسلام کی تمام تحریکوں نے قاضی صاحب کو اپنا قائد مان لیا تھا اور اپنے تمام مسائل اور خلفشار کے خاتمے کیلئے قاضی صاحب کی خدمات حاصل کرتے۔
پاکستان کے واحد سیاسی رہنما تھے جو اقبال کے فارسی اور اردو کلام پر عبور رکھتے تھے بلکہ برمحل اور برموقع خوبصورت استعمال بھی کرتے تھے۔

قاضی صاحب کو اللہ نے دو بیٹے اور دو بیٹیاں عطا کی ہیں لیکن حقیقت یہ ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ ان کے لاکھوں روحانی بیٹے اور بیٹیاں ہیں جو ان سے آج بھی محبت کرتے ہیں ان کی مغفرت اور بلندی درجات کیلئے دعاگو ہیں اور ان کے عظیم الشان مشن کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے ہمہ وقت تیار ہیں۔

اللہ قاضی صاحب کی قبر کو نور سے منور کردے اور کروٹ کروٹ جنت نصیب کرے ۔ہمیں ان کے مشن کو خلوص محنت اور لگن سے آگے بڑھانے کی توفیق عطا کرے۔

About the author

Haq Nawaz Malik

Add Comment

Haq Nawaz Malik

Get in Touch